153

آکسیجن کی تقسیم کاری کیلئے قومی ٹاسک فورس تشکیل

نئی دلی //ہندوستان میں کورونا بحران کے درمیان آکسیجن کی تقسیم کو بہتر بنانے کے لیے سپریم کورٹ نے ایک نیشنل ٹاسک فورس تشکیل دیا ہے۔ عدالت عظمیٰ نے کہا ہے کہ 12 رکنی ٹاسک فورس ضروری دواوں کی دستیابی اور کووڈ سے نمٹنے کی مستقبل کی تیاریوں پر بھی مشورہ دے گا۔ اس کے ساتھ ہی عدالت نے مرکز سے مل رہے آکسیجن پر ریاستوں کی جوابدہی طے کرنے کی بھی ضرورت بتائی ہے۔ عدالت نے کہا ہے کہ ریاستوں کی طلب اور وہاں کے نظامِ تقسیم کے اندازہ کے لیے ہر ریاست کا اآکسیجن آڈٹ کروایا جائے گا۔سپریم کورٹ نے کل جاری حکم میں 12 رکنی نیشنل ٹاسک فورس کی تشکیل کے بارے میں بتایا۔ اس ٹاسک فورس کے کنوینر کابینہ سکریٹری یا ان کی طرف سے نامزد افسر ہوں گے۔ مرکزی صحت سکریٹری بھی اس کے رکن ہوں گے۔ ملک کے مشہور و معروف ڈاکٹروں کو ٹاسک فورس میں شامل کیا گیا ہے۔ ان ڈاکٹروں کے نام ہیں ڈاکٹر بھبتوش بسواس، ڈاکٹر دیویندر سنگھ رانا، ڈاکٹر دیوی پرساد شیٹی، ڈاکٹر گگن دیپ کنگ، ڈاکٹر جے وی پیٹر، ڈاکٹر نرین تریہن، ڈاکٹر راہل پنڈت، ڈاکٹر سومتر راوت، ڈاکٹر شیو کمار سرین اور ڈاکٹر ضریر ایف اڈاواڈیا۔سپریم کورٹ نے ٹاسک فورس کی مدت کار فی الحال 6 مہینے رکھی ہے۔ ٹاسک فورس سے کہا گیا ہے کہ وقت وقت پر عدالت کو رپورٹ دے۔ ساتھ ہی عدالت نے یہ بھی کہا ہے کہ آ کسیجن تقسیم کے نظام کو بہتر بنانے کو لے کر ایک ہفتے میں مشورہ دیا جائے۔ حکم میں صاف کیا گیا ہے کہ جب تک ٹاسک فورس الگ الگ ریاستوں کے لیے آکسیجن کے الاٹمنٹ کا انتظام طے نہیں کرتا، اس وقت تک مرکز سپریم کورٹ یا ہائی کورٹ کی طرف سے بتائی گئی مقدار میں ہی کسی ریاست کو آکسیجن دیتا رہے گا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں