138

کورونا کرفیو کا9واں دن

سرینگر// کورونا کرفیو کے 9ویں دن جموں کشمیرکے بیشتر اضلاع میں روزمرہ زندگی مفلوج ہے۔9روز سے کاروباری و تجارتی مراکز مقفل ہیں،جبکہ پبلک ٹرانسپورٹ مکمل طور پر بند ہے۔اس دوران وادی میںپولیس نے ضوابط کی خلاف ورزی کی پاداش میں29گاڑیوں کو ضبط کرنے کے علاوہ زائد از100افراد کی گرفتاری عمل میں لائی گئی۔ متاثرہ اضلاع میں لاک ڈائون سختی سے نافذ ہے۔ اگر چہ سرکاری طور پر وادی کے 3اور جموں کے 2اضلاع میں ہی کورونا کرفیو نافذ کیا گیا لیکن کورونا کی صورتحال دیکھتے ہوئے پوری وادی اور جموں کے پیشر علاقوں میں سب کچھ بند کیا گیا ہے۔لوگوں کو گھروں میں رہنے کی اپیلیں کی جارہی ہیں تاکہ کورونا کی زنجیر کو توڑا جاسکے۔جموں اور کشمیر میں صرف نجی گاڑیاں ہی سرکوں پر دوڑ رہی ہیں اور انکی تعداد بھی بہت کم ہے۔عام لوگوں کی نقل و حرکت بھی بہت حد تک محدود ہوگئی ہے ۔ اورسنیچرکو بھی اس میں کوئی چھوٹ نہیں دی گئی۔ پبلک ٹرانسپورٹ کی نقل وحمل بندہے، تمام کاروباری و تجارتی مراکز مقفل ہیں اس کے ساتھ ساتھ رستوران ، ہوٹل اورگیسٹ ہاو س بھی تالہ بندہیں ۔ مجموعی طور پر جموں کشمیرکے بیشتر اضلاع میںکورونا وائرس کی دوسری لہر میں شدت کے ساتھ ہی مسلسل نویں روز بھی کورونا کرفیو سے ہر سو سناٹارہا۔ پولیس و انتظامیہ کی جانب سے کورونا سے متعلق معیاری عملیاتی طریقہ کار اور رہنما اصولوں کی خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی جاری ہے۔ پولیس کا کہنا ہے کہ گزشتہ24 گھنٹوں کے دوران106افراد کو ضوابط کی خلاف ورزی کی پاداش میں حراست میں لیا گیا،جبکہ58کیسوں کا اندراج بھی کیا گیا۔ پولیس کا کہنا ہے کہ602افراد سے91ہزار150روپے کا جرمانہ وصول کرنے کے علاوہ 29گاڑیوں کو بھی ضبط کیا گیا۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

اپنا تبصرہ بھیجیں